Post Azad

ًًمتحد کشمیریوں کا بھارتی ہائی کمیشن کے سامنے بھرپور احتجاج

لندن() کشمیریوں کی بہت بڑی تعداد نے بھارت کے یوم آزادی پر انڈین ہائی کمیشن کے سامنے بھرپور احتجاج کیا ۔ احتجاج کرنے والوں کا کہنا تھا کہ بھارت کشمیر میں ہونے والے ظلم اور بربریت کو روکے اور کشمیریوں کوآزادی کا بنیادی حق دے ۔ایک سال قبل ملین مارچ میں ہونی والی بد نظمی کے پیش اس مرتبہ ریلی کی آرگنائزنگ کمیٹی نے اس احتجاج کو غیر سیاسی اور غیر جماعتی ہونے کا نعرہ لگایا تھا جس میں وہ کافی حد تک کامیاب رہے ۔ تقریب کی خاص بات یہ تھی کہ نہ تو کوئی لمبا چوڑا سٹیج لگایا گیا اور نہ ہی شرکاء نے لمبی لمبی تقاریر کی ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بیرسٹر سلطان محمود نے کہا کہ عالمی برادری کشمیر میں ہونے والے ظلم پر خاموش رہی تو کشمیری نوجوان جمہوری طریقوں سے ہٹ کر بندوق کا راستہ اختیار کر سکتے ہیں ۔ بیرسٹر سلطان کشمیریوں کے ایک جگہ اکھٹے ہونے کو مثبت قرار دیا ۔ 13نومبر کو مودی کی برطانیہ آمد پر بھرپور احتجاج کرنے کی کال بھی دی ۔
عبدالرشید ترابی نے کہا بھارتی مقبوضہ کشمیر میں علی گیلانی ، یاسین ملک ، شبیر شاہ اور میر واعظ کی اپیل پر پوری ریاست اور دنیا بھر میں احتجاج کی کال دی گئی ۔ جب تک بھارتی جارحیت جاری رہے گے ہمارا احتجاج دنیا کے ہر کونے جگہ جاری رہے گا ۔ ممبران پارلیمنٹ ، بیرسٹر سلطان اور لارڈ نذیر کی ذمہ داری ہے کہ وہ مسئلہ کشمیر حل کرانے میں کردار ادا کریں ۔ہم اکیلے جدو جہد نہیں کر رہے اب آزاد خالصتان بھی بن کر رہے گا ، سکھوں کی قربانیاں رنگ لائیں گی ۔ بی بی سی اور سی این این خود کشمیر جائیں اور کشمیریوں پر ہونے والے مظالم کو اپنی آنکھوں سے دیکھیں جہاں زبردستی مسلمانوں کی نسل کشی کا سلسلہ جاری ہے جو مودی حکومت کا اصل روپ ہے ۔
لارڈ نذیر نے روائیتی انداز میں کشمیریوں کو مبارکباد پیش کی اور کہا آج یوم سیاہ ہے جو بھارت کا اصل چہرہ ہے۔ ہم “ہندوتا”کو نہیں مانتے جہاں مسلمانوں، عیسائیوں ، سکھوں اور دیگر مذاہب کے لوگوں کو زبردستی ہندو بنایا جا رہا ہے ۔ 13نومبر کو بھارت کاچہرہ بے نقاب کرنا ہمارا فرض ہے ۔ ہمیں احتجاج سے عالمی طاقتوں کو باور کروانا ہے کہ بھارت سلامتی کونسل کا مستقل رکن بننے کے قابل نہیں ہے جب تک وہ کشمیریوں اور سکھوں کو آزادی نہیں دے دیتا ہمیں آزاد کشمیر اور آزاد خالصتان اکھٹا چاہیے ۔ آپ تمام لوگ ہمارے سفیر ہیں مودی کے آنے پر اس کا گھیراؤ کریں گے ۔ مودی کے زیر اثر جنونی ہندو وں کی تنظیمیں اقلیتوں کے قتل عام میں مصروف ہیں ۔ لارڈ نذیر لوگوں کو سٹیج کمزور ہونے کا بھی بتاتے رہے ۔ دیگر مقرریں میں فہیم کیانی ، امجد کیانی ، راجہ زبیر کیانی اور دیگر نے خطاب کیا ۔ تمام مقررین نے کامیاب اور پر امن ریلی کے انعقاد پر انتظامیہ کو مبارکباد دی ۔
ریلی میں قوم پرست جماعت کے چند نمائندوں نے شرکت کی ۔ قوم پرستوں کے کچھ دھڑے اسے پاکستان سپانسر قرار دیتے ہیں ۔ ریلی پاکستان سپانسر ہے تھی یا نہیں اس بات کا تو وقت ہی بتائے گا ۔ مگر آزادی کے لیے کشمیریوں اور سکھوں کا ایک پلیٹ فارم پر کھڑا ہو کر احتجاج کرنا بھارت کے لیے خطرے کی گھنٹی ضرور ہے۔

Share this:

Related News

Comments are closed

Jobs: career@azadnews.co.uk
News: news@azadnews.co.uk
Enquiries: info@azadnews.co.uk
Tel: +44 7914314670 | 07588333181

Copyright 2015 © AZAD is a part of Indigo Marketing & Media Productions Ltd.
41 West Riding Business Center, BD1 4HR |08657270| England & Wales.